امریکہ نے مشہور ایپلیکیشن ٹک ٹاک پر پابندی لگا دی

3
137
ٹک ٹاک
ٹک ٹاک پر پابندی

ٹک ٹاک

پوری دنیا میں کچھ ہی وقت میں شہرت کی بلندیوں پر پہنچے والی ویڈیو شیرینگ ایپلیکیشن ٹک ٹاک کو ریاست ہائے متحدہ  امریکہ میں پابندی کا سامنا کرنا پڑ گیا ہے ۔مشہور ایپلیکشن ٹک ٹاک اور میسیجنگ ایپ وی چیٹ کو ڈاون  لوڈ کرنے پر پابندی لگا دی گئی ہے یہ پابندی امریکی صدر ڈولنڈ ٹرمپ کی طرف سے لگائی گئی ہے ۔امریکی صدر نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ چین کی طرف سے بنائی گئی تمام ایپلیکیشن امرکہ کی قومی انہوں نے کہا کہ چین کی کمیونسٹ پارٹی ٹک ٹاک کے زریعے امریکہ کی قومی سلامتی ،خارجہ پالیسی اور معیشیت کو خطرہ میں ڈالنے کا ارادہ رکھتے ہیںسلامتی کے لئے خطرہ ہیں

 امریکی صدر کے ان ایپلیکیشن کو بند کرنے کے حکم کے بعد چینی ایپلیکیشن وی چیٹ کو بند کر دیا گیا ہے جبکہ ٹک ٹاک کے موجودہ صارفین اس سال نومبر تک یہ ایپلیکیشن استعمال کر سکیں گے ۔رواں سال ۱۲ نومبر کے بعد ٹک ٹاک پر بھی امریکہ میں پابندی عائد کر دی جائے گی ۔امریکی حکام کا کہنا ہے کہ پابندی کے بعد ان ایپ کو گوگل اور پلے سٹور سے ڈاون لوڈ نہیں کیا جا سے گا ۔امریکی پارلیمنٹ کا کہنا ہے کہ امریکی حکومت عوام الناس کو اس ایپ کے استعمال سے بار بار منع کرتی رہی ہے کیونکہ اس کے استعمال سے صارف اپنا تمام پرسنل ڈیٹا ایپ میں جمع کرواتا رہتا ہے

معاہدہ ختم

زرائع کے مطابق ٹرمپ نے ٹک ٹاک کا اوریکل سے بھی معاہدہ ختم کروا دیا ہے ۔ٹرمپ نے اس ایپلیکیشن کے مالک بائٹ ڈانس پر دباو ڈالتے ہوئے کہا ہے کہ وہ ٹک تاک کو امریکہ کو فروخت کر دیں یا پھر اس کے کچھ شئیر امریکی کمپنیوں کو فروخت کر دیں تاکہ جو خدشات کا سامنہ ان کو کرنا پر رہا ہے وہ ختم ہوں  ٹرمپ نے ان یپ کے مالکان کو نومبر تک کا وقت دیا تھا  تاہم میسج ایپ وی چیٹ کے مالک کی طرف سے کوئی خبر سامنے نہیں آئی ہے جس کی بعد اس کو امریکہ بھر میں بروز اتوار کو بندکر دیا گیا ہے ۔جبکہ ٹک ٹاک کی ٹیم کی طرف سے یہ خبر آئی تھی کہ دونوں ممالک کے درمین معائدہ طے پا گیا ہے

تاہم اب معاہدہ کے دستاویزات امریکی کامرس ڈیپارٹمنٹ ک بھجوائے جانے کے بعد امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا تھا کہ وہ ٹک ٹاک اور اوریکل کے درمیان ہونے والے معاہدے کے دستاویزات پر دسخط نہیں کریں گے۔امریکی صدر کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی کے معاملات میں وہ کسی قسم کی ملاوٹ برداشت نہیں کریں گے ۔امریکی صدر ٹرمپ کا کہنا ہے کہ وہ ٹک ٹاک اور اوریکل کے مابین ہونے والے معاہدہ کو دیکھ رہے ہیں اور جب تک وہ اس معاہدہ سے مطمئن نہیں ہونگے وہ اس معاہدہ کے کسی دستاویزات پر دستخط نہیں کریں گے اس سے قبل ہمارا پروسی ملک بھارت بھی ٹک ٹاک اور وی چیٹ پر پابندی عائد کر چکا ہے  اور برطانیہ کے انفارمیشن کمیشن میں بھی اس ایپلیکیشن کو بند کرنے کے حوالہ سے بات چیت جاری ہے

مزید پڑھیں : نیب نے شراب کے لائسنس میں اکرم اشرف گوندل کو گرفتار کرلیا

3 COMMENTS

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here