قرآن و حدیث کی روشنی میں علم کی حقیقت اور اہمیت

1
178
علم کی حقیقت
علم کی حقیقت

علم کی حقیقت: اسلام نے حصول علم کو بہت اہمیت دی ہے علم کے بارے میں قرآن مجید کی صرف چند آیات کے مطالعے سے علم کی اہمیت واضح ہو جائے گی جناب رسول خدا حضرت محمدﷺ پر نازل ہونے والی پہلی آیت سورہ علق ۱ تا ۵ اے رسول خداﷺ اپنے پروردگار کا نام لے کر پڑھو جس نے ہر چیز کو پیدا  کیا پڑھو اور تمہارا رب بڑا  کریم ہے جس نے قلم کے زریعے سے تعلیم دی اور انسان کو وہ باتیں بتائیں جن کو وہ جانتا ہی نہیں تھا ۔

سورہ مجادلہ آیت نمبر ۱۱ کے ایک حصہ کا ترجمہ

اللہ ان لوگوں کو جو تم میں سے ایمان لائے ہیں ایک درجہ بڑھائے گا لیکن جنہیں علم دے گیا ہے ان کے بہت سے درجات بڑھا دے گا ۔

سورہ زمر آیت نمبر ۹ کے ایک حصہ کا ترجمہ

کیا وہ لوگ جو علم رکھتے ہیں اور جانتے ہیں ان لوگوں کے برابر ہو سکتے ہیں جو نہیں جانتے .

عالم اور جاہل کے اس فرق کو صرف عقلمند لوگ ہی سمجھ سکتے ہیں ۔

احادیث

پہلی حدیث

جناب رسالت مابﷺ نے فرمایا  کہ علم کا حاصل کرنا ہر مسلمان پر فرض ہے .

دوسری حدیث

علم حاصل کرو چاہے اس کے لئیے تمہیں چین جانا پڑے ۔

تیسری حدیث

گہوارے سے لے کر قبر تک علم حاصل کرو ۔

چوتھی حدیث

حکمت مومن کی گمشدہ میراث ہے وہ اسے جہاں بھی پائے گا حاصل کرے گا ۔

پانچویں حدیث

علم کا حاصل کرنا ہر مسلمان پر واجب ہے اللہ تعالی طالب علموں کو دوست رکھتا ہے ۔

چھٹی حدیث

جاہل عابد کی عبادت کرنے سے علم کا سونا افضل ہے ۔

ساتویں حدیث

ایک عالم  جو دو رکعت نماز پڑھتا ہے جاہل کی ہزار رکعت نماز پڑھنے سے افضل ہے ۔

آٹھویں حدیث

جو شخص کسی کو علم سکھائے اسے قیامت تک اسے عمل کرنے والے  کے برابر ثواب ملتا رہے گا ۔

نویں حدیث

علماء کے چہرے کی طرف نظر کرنا عبادت ہے۔

دسویں حدیث

جو کوئی بغیر علم کسی کام میں ہاتھ ڈالے گا تو اسے صحیح کرنے کے بجائے اورخراب کرے گا ۔

گیارہویں حدیث

جس کے علم میں اضافہ ہو اور اس کی ہدایت مٖیں اضافہ نہ ہو تو اس نے اللہ سے دوری میں اضافہ کیا ہے ۔

بارہویں حدیث

اللہ کے ہاں ایک عالم ہزار شہیدوں سے زیادہ مکرم ہے ۔کیونکہ علماء انبیاء کی پیروی کرتے ہیں اور شہید علماء کی ۔

تیرہویں حدیث

حکمت کا کلمہ جسے مومن سنتا ہے ایک سال کی عبادت سے بہتر ہے ۔

چودھویں حدیث

عالم جاہلوں کے درمیان ایسا ہے جیسے مردوں میں زندہ ہو۔

طالب علم کے لئیے ہر چیز طلب مغفرت کرتی ہے بس تم علم حاصل کرو کیونکہ یہ تمہارے لئیے اپنے پروردگار سے تقرب حاصل کرنے کا زریعہ ہے ۔

مندرجہ بالا تمام قرآنی آیات اور احادٖیث کی روشنی میں یہ بات واضح ہے کہ احکام الہی اور ارشادات پیغمبرﷺ  تمام مرد اور عورتوں کے لئیے ہیں ۔

مزید پڑھیں : سونے کی قیمت میں اتار چڑھاؤ کی وجہ کیا ہے؟

1 COMMENT

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here