عالمی ادارہ صحت کی پاکستان کے سمارٹ لاک ڈاون کی حکمت عملی کی تعریف

29
619
سمارٹ لاک ڈاون
سمارٹ لاک ڈاون

سمارٹ لاک ڈاون

دنیا کے تمام بڑے ممالک کی طرح پاکستان بھی اس وقت اس وبا سے لڑرہا ہے جس نے دنیا کے تقریبا ہر انسان کو اپنا شکار بنانے کی ٹھانی وی ہے کرونا وائرس ایک جان لیوا مرض ہے اور پچھلے کئی ماہ سے پوری دنیا میں ان گنت افراد اس وائرس کی وجہ سے اپنی جان   سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں ۔اسی خطرے کے پیش نظر پوری دنیا کی طرح پاکستان میں بھی لاک ڈاون  کیا گیا تا کہ لوگوں میں سماجی    فاصلہ اختیار کیا جا سکے پچھلے ۴ ماہ سے قائم اس لاک ڈاون کی وجہ سے ملک بھر میں کرونا وائرس کے امراض کی تعداد کو کافی حد تک کم کیا گیا ہے  حال ہی میں قائم کئیے گئے سمارٹ لاک ڈاون کی وجہ سے  کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد میں بڑی حد تک کمی دیکھنے کو ملی ہے ۔

پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاون کی حکمت عملی کی تعریف  عالمی ادارہ صحت نے بھی کی ہے تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان اور سربراہ عالمی ادارہ صحت ڈاکٹر ٹیڈروس کا  ویدیو لنک کے زریعے رابطہ ہوا ہے  جس میں عالمی ادارہ صحت کے سربراہ نے عمران خان کی ملک بھر میں کئیے گئے سمارٹ لاک ڈاون کی تعریف کی ہے اور  کورونا کے خلاف پاکستان کے اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے انہیں قابل ستائش قرار دیا گیا ہے۔

ڈاکٹر ٹیڈروس

ڈاکٹر ٹیڈروس نے کہا ہے کہ کرونا وائرس سے نپٹنے کے لئیے پاکستان کے اقدامات کی جتنی تعریف کی جائے  کم ہے پاکستان  اب بہت جلدی سے اس وبا پر قابو پا رہا ہے او وہ دن دور نہیں ہے جب پاکستان کرونا وائرس پر مکمل کنٹرول حاصل کر لے گا ۔جبکہ دوسری طرف عمران خان نے ورلڈ ہیلتھ آرگانئیزیشن کے کام کو سراہا ہے ۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہیلتھ کیئر سہولیات کی فراہمی کے لئے سائنسی بنیادوں پر حکمت عملی اختیار کی ہے۔

وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بتایا گیا کہ ہیلتھ کیئر کی سہولیات کی فراہمی کے لیے سائنسی بنیادوں پر اعداد و شمار پر مبنی حکمت عملی پر عمل کیا جا رہا ہے اور معمولات زندگی اور حفاظتی اقدامات کے درمیان توازن کی پالیسی کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں جس سے وبا کے پھیلاؤ میں واضح کمی آ رہی ہے تاہم ترقی یافتہ ممالک کی جانب سے سفری پابندیوں سے ترقی پذیر ممالک کی معیشت پر منفی اثرات مرتب ہو رہے ہیں۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عالمی ادارہ صحت پاکستان کے ساتھ مل کر دیگر ترقی پذیر ممالک کے لئے سفری پابندیوں کو ختم کرنے کے لئے اقدامات کرے۔ تاکہ وہ افراد جو غیر ملکی  ہیں وہ ان جگہات پر واپس جا سکیں جہاں سے وہ تعلق رکھتے ہیں ۔ چین کے شہر ووہان سے شروع ہوے والے یہ وائرس جو کرونا  کے نام سے پوری دنیا میں جانا گیا پوری دنیا کو اپنا شکار بنانے کے بعد پاکستان میں بھی اس وبا نے اپنے پنجے گاڑے ہیں اور اب تک تقریبا ۵ ہزار افراد کو اپنا شکار بنا چکا ہے

مزید پڑھیں: ملک بھر میں ریلوے کراسنگ پر آٹو میٹک وارنگ سسٹم لگائے جانے کا فیصلہ

29 COMMENTS

  1. I like the valuable info you provide in your articles.
    I will bookmark your weblog and check again here frequently.
    I am quite certain I will learn a lot of new stuff right here!
    Best of luck for the next!

    My web site :: fun88

  2. Aw, this was an exceptionally good post. Taking the time and actual effort to generate a very
    good article… but what can I say… I put things off a lot and don’t seem to get anything done.

    Stop by my blog post; Reva

  3. I blog often and I truly appreciate your information. This great article has truly peaked my interest.

    I am going to take a note of your site and keep checking for new information about once per week.
    I subsscribed to your Feed too.

    My webpage :: TheIndianTimes

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here