چین کی عظیم دیوار

100
1100
diwar-e-cheen
diwar-e-cheen

چین کی یہ عظیم دیوار کی تعمیر حضرت عیسی ؑکی پیدائش تقر یبادو سال پہلے چین کے بادشاہ چن شی ہوانگ نے اپنے دشمنوں کے حملوں محفو ظ رہنے کے لئےشما لی سر حد پر دیوار بنا نے کی خواہش کی۔  یہ مشر ق سے لے کر مغرب میں لوپ جھیل تک ،شما ل میں موجودہ چین ،روس کی سر حد

سے لے کر جنو ب میں دریائے تا وتک پھیلا ہوا ہے۔ ا س کی لمبا ئی تقر یبا پندرہ سو میل ہےاور بیس سے تیس فٹ تک اونچی ہے۔ چوڑائی نیچے سے پچیس فٹ اور اوپر سے بارہ فٹ ہے۔ہر دو سو گز کے فا صلے پر پہریداورں کے لئے مضبو ط پنا ہ گا ہیں بنی  ہوئی ہیں۔دیوار چین جو پا نچ ہزار

کلومیٹر سے زیادہ علاقے میں پھیلی ہوئی ہے،اس دیوار کو سترہ کے زاویے پر بنایا گیا۔دیوار چین میں کا م کر نے والوں کو تین حصوں میں تقسیم کیا گیا ،پہلے نمبر پر فوجی تھے جو فورس کے طور پر  کام کر تے تھے،دوسرے مزدوراور تیسر ے عا م لو گ تھے ۔ان تینوں نے مل کر اس دیوار کو تشکیل دی۔جو کے اپنی مثا ل آپ ہے۔ اس کے علاوہ کئی ریا ستوں نے چھو ٹے ہتھیاروں سے

لڑ نے کے لئے                  قلعے تعمیرکیے۔

منگلول کے حملوں میں دیواورں کی تعمیر:

دیوار چین

دیوار چین

چین کے شما ل میں ایک منگلول قوم آباد تھی،اس قوم کے لوگ چور اور ڈاکوتھےاور منگ لگاتار

لڑائیوں کے بعد منگلول قبائل پر واضح بالا دستہ حا صل کر نے میں نا کا م رہاتھااور طو یل عرصے

سےجا ری تنازعہ نے سلطنت کو سخت نقصان پہنچا یا۔منگ نے چین کی شما لی سر حد کے ساتھ دیواریں بنا کر خانہ بدوش قبائل کو دور رکھنے کی حکمت عملی اپنائی ۔ یہی وجہ تھی آئے دن قومیں چین پر حملہ آور ہو تی تھی اور چین کا مال دولت ،لو ٹ کر لے جا تےتھے۔ یہی وجہ تھی  ان حملوں

سے بچنے کے لئے دیواروں کا عمل وجود میں آیا۔ یہ دیوار دریا ئے یلو کےموڑ کو شامل کر نے

کی بجائےصحرا کے جنو بی کنارے کے پیھچےچلی گئی۔شروع میں دیوار چین کی تعمیر مٹی اور 

چٹا نوں سے کی گئی تھی جو اتنی زیا دہ مضبوط نہ تھی ،منگ کی تعمیر زمین کی بجا ئے اینٹوں اور پتھرکے استعمال  کی وجہ سے مضبوط اور زیادہ وسیع تھی ۔دیوار پر پچیس ہزار چو کیدارتعمیر کیے گئے۔منگ نے دیواروں کی مرمت اور ان کی مضبوط بنا نے کے لئے وسائل وقف کیے۔

سترویں صدی عیسوی اس دیوار کو میں مکمل کر لیا گیا۔اس کے بعد جو بھی حکو مت اس نے اس کی مرمت اور بحا لی کے لئے کا م کیا۔چین کے با قی حصوں میں بھی دیواریں تعمیر کی گئی اور ان کے پھاٹک رات کو بند کر دیے جاتے تھے۔دیوارچین دنیا کے چند عجوبوں میں ایک عجوبہ ہےاور چین کو کسی بھی حملے سے محفوظ بھی رکتھی ہیں۔ہر سال لا کھو ں لو گ پوری دنیا سے دیکھنے آتے ہیں 

100 COMMENTS

  1. Oh my goodness! Impressive article dude! Thank you so much, However I am going through issues with your
    RSS. I don’t understand why I am unable to join it. Is there anyone else having similar RSS problems?

    Anyone that knows the solution will you kindly respond? Thanx!!

    Feel free to visit my web site web host

  2. Hi would you mind stating which blog platform you’re working with?
    I’m going to start my own blog soon but I’m having a tough time choosing
    between BlogEngine/Wordpress/B2evolution and
    Drupal. The reason I ask is because your layout seems different
    then most blogs and I’m looking for something unique.
    P.S Apologies for getting off-topic but I had to ask!

    Here is my web site – black mass

  3. Although ED is non an inevitable upshot of aging, there is
    a empiricism correlation coefficient with eld.

    The preponderance of 5.1% in 20- to 39-year-sometime hands increases to 70.2% in work force 70
    old age of maturate and elderly. Because the aetiology of ED often involves a combining of
    vascular, neurological, endocrinological, and psychological factors, the train is non special to elderly men.
    Former hazard factors so much as cardiovascular
    disease, hypertension, diabetes, hypercholesterolemia, and smoking have got been powerfully connected with an increased
    prevalence of ED http://lm360.us/

  4. If Japan is neck of the woods of best district to go for cialis online forum regional anesthesia’s can provides, in primary, you are old to be a Diagnosis: you are high to other treatment the discontinuation to take selective as it most. clomid uk Akbpna knbdqh

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here